Schemes of NHSR ministry: Senate body conditionally approves 36 projects

اسلام آباد: سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے نیشنل ہیلتھ سروسز اینڈ ریگولیشنز نے منگل کو وزارت نیشنل ہیلتھ سروسز اینڈ ریگولیشنز کے جاری پبلک سیکٹر ڈویلپمنٹ پروگرام (PSDP) کے تحت 36 منصوبوں کی متفقہ طور پر منظوری دے دی۔

کمیٹی کا اجلاس یہاں سینیٹر ڈاکٹر محمد ہمایوں مہمند کی زیر صدارت منعقد ہوا جس میں وزارت نیشنل ہیلتھ سروسز کی جانب سے آئندہ مالی سال 2023-2024 کے لیے تجویز کردہ PSDP کی جانچ پڑتال کے حوالے سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔

کمیٹی کے ارکان نے مجوزہ منصوبوں پر تفصیلی بحث کرتے ہوئے وزارت کی مختلف سکیموں سے متعلق اپنی تجاویز اور سفارشات دیں۔

کمیٹی کو پی ایس ڈی پی کے تحت مختلف پراجیکٹس کی صورتحال کے بارے میں تفصیل سے بریفنگ دی گئی جن میں لاگت، مدت، تھرو فارورڈ اور متوقع ڈیمانڈ شامل ہیں۔ کمیٹی نے تفصیلی بحث کے بعد متفقہ طور پر 36 جاری منصوبوں کی مشروط منظوری دی۔ کمیٹی نے رواں سال اگست میں جاری منصوبوں کا دورہ کرنے کا فیصلہ کیا تاکہ تکمیل کے بعد ان کی صورتحال کے بارے میں جان سکیں۔

وزارت کے حکام سال 2023-2024 کے لیے مجوزہ 14 نئے منصوبوں کے ساتھ پینل کو مطمئن کرنے میں ناکام رہے۔ پینل نے نئے منصوبوں کی تفصیلات فراہم نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کیا اور وزارت سے کہا کہ وہ اگلی میٹنگ میں مکمل تفصیلات کے ساتھ ترجیحی طور پر منصوبوں کی فہرست فراہم کرے۔ کمیٹی نے آئندہ اجلاس میں پاکستان ورکس ڈیپارٹمنٹ (PWD) کے نمائندوں کو بلانے کا ارادہ بھی ظاہر کیا۔

کمیٹی کو دارالحکومت کے مختلف سرکاری ہسپتالوں میں ایم آر آئی مشینوں کی تنصیب اور آپریشن سے متعلق سکیموں سے بھی آگاہ کیا گیا۔ بتایا گیا کہ NIRM میں 1.5 ملین امریکی ڈالر کی MRI مشین کی قسط سے متعلق اسکیم 30 جون 2023 تک مکمل ہو جائے گی۔ پینل نے NIRM میں MRI مشین کی تنصیب میں تاخیر پر ناراضگی ظاہر کی۔

پمز کے نمائندوں نے کمیٹی کو یہ بھی بتایا کہ پمز میں ایک ایم آر آئی اگلے ماہ مارچ میں فعال ہو جائے گا جبکہ پولی کلینک ہسپتال میں ایک ایم آر آئی دو ماہ میں آپریشنل ہو جائے گا تاکہ پولی کلینک میں جائیکا (جاپان انٹرنیشنل کوآپریشن) کے تعاون سے ریڈیالوجی ڈیپارٹمنٹ کو اپ گریڈ کیا جا سکے۔ ایجنسی)۔

ڈی ایچ او کے نمائندوں نے اپنی سکیموں/منصوبوں کی تعداد بتاتے ہوئے بتایا کہ ترالائی، اسلام آباد میں شاہ سلمان بن عبدالعزیز السعود ہسپتال کے قیام کا 7.5 ملین سعودی ریال کا منصوبہ ڈیزائن اور طریقہ کار کے مسائل کی وجہ سے پھنس گیا ہے۔

انہوں نے کمیٹی کو بتایا کہ کنسلٹنسی کو حتمی شکل دینے میں دو سال ضائع ہو گئے اور سعودی حکام بھی سابقہ ​​ترتیب سے خوش نہیں ہیں۔ اب ہسپتال کے دوبارہ جائزے کے ڈیزائن پر سعودی حکام کے ساتھ 7 مارچ 2023 کو تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

اجلاس کے اختتام پر، چیئرمین کمیٹی نے جاری منصوبوں پر نظرثانی کرنے اور ان کی حالت کا جائزہ لینے کا اپنا ارادہ ظاہر کیا جن میں سے بیشتر اگست 2023 میں وزارت کے 30 جون 2023 کو مکمل ہوں گے۔ دارالحکومت، کمیٹی نے مارچ 2023 سے ہسپتالوں کا دورہ شروع کرنے کا فیصلہ کیا تاکہ ان کی حالت و حالت کا جائزہ لیا جا سکے اور ان کی بہتری کے لیے تجاویز دیں۔

کاپی رائٹ بزنس ریکارڈر، 2023



>Source link>

>>Join our Facebook page From top right corner. <<

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *