Imran announces \’suspension of Jail Bharo movement\’ after SC verdict

سپریم کورٹ (SC) کی 3-2 کی تعریف فیصلہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے بدھ کو کہا کہ پنجاب اور خیبرپختونخوا میں انتخابات 90 دن کے اندر ہونے چاہئیں، پارٹی کی \’جیل بھرو تحریک\’ معطل کر دی جائے گی۔

فیصلے کے بعد، عمران نے اپنے ٹویٹر ہینڈل پر لکھا، \”یہ سپریم کورٹ کی ذمہ داری تھی کہ وہ آئین کو برقرار رکھے اور انہوں نے آج اپنے فیصلے کے ذریعے بہادری سے یہ کام کیا ہے۔\”

انہوں نے کہا کہ پارٹی اپنی \’جیل بھرو تحریک\’ کو معطل کر کے کے پی اور پنجاب میں انتخابی مہم کو آگے بڑھا رہی ہے۔

آج کے اوائل میں اپنے فیصلے میں، ملک کی اعلیٰ ترین عدالت نے مشاہدہ کیا کہ کے پی کے گورنر اپنی آئینی ذمہ داری کی خلاف ورزی کر رہے ہیں اور انہیں انتخابات کی تاریخ کا اعلان کرنا چاہیے۔ بنچ نے کے پی کے گورنر کو ہدایت کی کہ وہ ای سی پی سے مشاورت کے بعد صوبے میں انتخابات کی تاریخ مقرر کریں۔

پنجاب کے لیے، سپریم کورٹ نے صدر ڈاکٹر عارف علوی کو ہدایت کی کہ وہ الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) سے مشاورت کریں اور صوبے میں 90 دن میں انتخابات کرانے کی کوشش کریں۔

پنجاب اور کے پی کے انتخابات: سپریم کورٹ نے 90 دن میں انتخابات کا حکم دے دیا۔

دریں اثنا، پی ٹی آئی رہنما اور انسانی حقوق کی سابق وزیر شیریں مزاری نے سپریم کورٹ کے فیصلے کو \”پی ٹی آئی کی پوزیشن کی فتح\” قرار دیا۔

انہوں نے کہا کہ عدالت عظمیٰ نے کے پی حکومت کو آئین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پایا اور اسے برقرار رکھا۔

\”آئین جیت گیا۔ پارلیمانی جمہوریت جیت گئی۔ صدر پنجاب الیکشن کی تاریخ کا اعلان کریں گے اور انہوں نے کے پی کے گورنر کو پابند کیا ہے کہ وہ فوری طور پر انتخابات کی تاریخ کا اعلان کریں،\” پی ٹی آئی کے فواد چوہدری نے ٹویٹ کیا۔

پی ٹی آئی رہنما فیصل جاوید خان نے بھی فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ \’اس ملک کو کوئی نہیں ہرا سکتا جس کے پاس ایسی قوم اور عمران خان جیسا لیڈر ہو\’۔

سابق ڈپٹی سپیکر اسد قیصر نے فیصلے کو تاریخی قرار دیتے ہوئے پی ٹی آئی کارکنوں کو انتخابات کی تیاری کرنے کی ہدایت کی۔

کے پی کے سابق وزیر اعلیٰ محمود خان نے \”آئین کی بالادستی اور سپریم کورٹ کے آئینی فیصلے\” پر قوم کو مبارکباد دی۔

دیگر پارٹی رہنماؤں نے بھی سپریم کورٹ کے فیصلے کا خیر مقدم کیا۔

پس منظر

گزشتہ سال پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان نے اعلان کیا تھا کہ پنجاب اور خیبرپختونخوا میں ان کی حکومتیں نئے انتخابات کی راہ ہموار کرنے کے لیے اپنی اسمبلیاں تحلیل کر دیں گی۔ یہ بالآخر گزشتہ ماہ حاصل کیا گیا۔

17 فروری کو پھر عمران اعلان کیا مخلوط حکومت پر پنجاب اور کے پی میں انتخابات کرانے کے لیے \’جیل بھرو\’ تحریک۔

انہوں نے کہا کہ ’’وہ ایک کے بعد ایک بہانہ بنا رہے ہیں کہ ان کے پاس فنڈز نہیں ہیں، امن و امان کا مسئلہ ہے، ریاستی ادارے عدالت کے حکم کے باوجود تعمیل نہیں کر رہے ہیں،‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ اگر الیکشن نہ ہوئے تو 90 دن، یہ ایک آئینی بحران پیدا کرے گا.

تحریک کا آغاز گزشتہ ہفتے لاہور سے ہوا جہاں پنجاب کی مرکزی قیادت بشمول شاہ محمود قریشی، اسد عمر، سینیٹر اعظم خان سواتی اور عمر سرفراز چیمہ نے عدالت میں گرفتاریاں دیں۔



>Source link>

>>Join our Facebook page From top right corner. <<

Posted in News          

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *