لاہور: انتظامیہ نے اتوار کے روز لاہور کینٹ ایریا میں واقع پی اے ایف سینما کو 10 سالہ معاہدہ مکمل ہونے پر بند کرنے اور اسے آڈیٹوریم میں تبدیل کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اے پی پی.

لاہور کینٹ سینما کو 10 سال کے لیے نجی آپریٹر کو لیز پر دینے کے بعد مکمل طور پر تزئین و آرائش اور اپ گریڈ کیا گیا۔

اس کے آڈیٹوریم میں 500 افراد کی گنجائش تھی، اور تمام نشستیں صوفے پر بیٹھی تھیں۔ سینما کا آغاز دسمبر 2010 میں ہوا تھا جس میں کئی پاکستانی مشہور شخصیات نے شرکت کی تھی۔

یہ بات سنیما کے سابق مالک نادر لطیف نے بتائی اے پی پی کہ فلم اور سینما انڈسٹری کے بند ہونے کی کہانی اب ڈھکی چھپی نہیں تھی لیکن انڈسٹری کی مندی نے اس سے جڑے سیکٹر جیسے کہ سینما گھر تباہ کر دیے تھے۔

پاکستان میں فلم انڈسٹری کی بحالی کے بعد گزشتہ دہائی میں لوگوں نے ایک بار پھر سینما گھروں کا رخ کرنا شروع کر دیا تھا۔ اچھے مواد، اچھے اداکار، کہانی اور نئی ٹیکنالوجی والی فلموں نے ناظرین کو سینما گھروں کا رخ کرنے پر مجبور کردیا۔

لاہور ہمیشہ سے سینما گھروں کا مرکز رہا ہے جہاں لوگ ٹکٹ کے حصول کے لیے قطاروں میں کھڑے رہتے تھے۔

یہ بات پی ٹی وی کے سینئر پروڈیوسر آغا قیصر نے بتائی اے پی پی کہ ڈیجیٹلائزیشن کے دور میں سینما گھر جانے کا رجحان ختم ہو گیا تھا، بہت سے سینما مالکان نے نئے کاروبار شروع کیے اور اپنے سینما گھروں کو پیٹرول اسٹیشن، شو رومز، پلازوں، شادی ہالز اور ہاسٹلز میں تبدیل کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں 20 سے زائد سینما گھر ہیں جو لوگوں کو معیاری تفریح ​​فراہم کر رہے ہیں۔

یہ سینما گھر مناسب قیمت پر 2D اور 3D فلمیں دکھاتے ہیں۔ لوگوں کے پاس اب بھی کچھ اختیارات ہوتے ہیں جب وہ تفریح ​​کے لیے باہر جانا چاہتے ہیں یا اپنی پسندیدہ فلمیں دیکھنا چاہتے ہیں۔



>Source link>

>>Join our Facebook Group be part of community. <<

By hassani

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *