اسلام آباد: حکومت نے پیر کو پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان اور ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کا نام 190 ملین پاؤنڈ نیشنل کرائم ایجنسی (این سی اے) کے اسکینڈل میں ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں ڈال دیا۔ القادر ٹرسٹ کیس۔

وفاقی کابینہ نے قومی احتساب بیورو (نیب) کی سفارش کے بعد سرکولیشن کے ذریعے خان اور ان کی اہلیہ کا نام ای سی ایل میں ڈالنے سے متعلق سمری کی منظوری دی۔

حکومت نے اس سے قبل پی ٹی آئی کے کئی رہنماؤں، سابق ارکان پارلیمنٹ بشمول خان اور ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کے نام عارضی قومی شناختی فہرست (PNIL) میں ڈالے ہیں تاکہ انہیں ملک چھوڑنے سے روکا جا سکے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی تحقیقاتی ادارے کی درخواست پر وزارت داخلہ نے اسد قیصر، حماد اظہر، مراد سعید، محمد قاسم خان سوری، یاسمین راشد، میاں اسلم اقبال اور دیگر کئی رہنماؤں، پی ٹی آئی کے سابق پارلیمنٹیرینز کے نام ای سی ایل میں ڈالے۔ پی این آئی ایل 09 مئی کو پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کی گرفتاری کے بعد احتجاجی مظاہروں کے دوران توڑ پھوڑ اور توڑ پھوڑ کے تناظر میں۔

پی ٹی آئی کے سربراہ 22 مئی کو القادر ٹرسٹ کیس میں نیب کی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) کے سامنے پیش ہوئے اور بیورو نے ان سے تقریباً چار گھنٹے تک پوچھ گچھ کی۔

کاپی رائٹ بزنس ریکارڈر، 2023



>Source link>

>>Join our Facebook Group be part of community. <<

By hassani

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *