پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی کو اڈیالہ جیل سے رہائی کے فوراً بعد منگل کو دوبارہ گرفتار کر لیا گیا۔ آج نیوز اطلاع دی

پی ٹی آئی کے ٹوئٹر ہینڈل نے اپنی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ قریشی کو پارٹی چھوڑنے سے انکار کے بعد گرفتار کیا گیا۔

“میں پارٹی کے ساتھ ہوں، پارٹی کے ساتھ رہوں گا،” بیان میں ان کے حوالے سے کہا گیا۔

قریشی 24 گھنٹوں کے اندر اسلام آباد سے گرفتار پی ٹی آئی رہنماؤں میں شامل تھے۔ پرتشدد مظاہروں کا آغاز سابق وزیراعظم عمران خان کی گرفتاری کے بعد حکومت نے پارٹی کے گرد گھیرا تنگ کر دیا۔

اسے 11 مئی کی صبح پولیس نے سیکشن 3 (3MPO) کے تحت اسلام آباد میں گلگت بلتستان ہاؤس پر چھاپہ مارنے کے بعد حراست میں لے لیا تھا۔

قریشی کی رہائی کا حکم اسلام آباد ہائی کورٹ (IHC) نے اس وقت دیا تھا جب وہ پرتشدد مظاہروں میں شرکت نہ کرنے کا حلف لینے پر راضی ہوگئے تھے۔

ادھر پی ٹی آئی رہنما مسرت جمشید چیمہ کو بھی رہائی کے بعد دوبارہ گرفتار کر لیا گیا ہے۔ پی ٹی آئی نے ان کی گرفتاری کی مذمت کی اور اسے حکومت کی “فسطائیت” کی مثال قرار دیا۔

پارٹی نے کہا، “ان طرز عمل کو فوری طور پر بند کیا جانا چاہیے، عدالت کے فیصلوں کا اب احترام کیا جانا چاہیے۔”



>Source link>

>>Join our Facebook Group be part of community. <<

By hassani

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *