لاہور: معروف قانون دان اعتزاز احسن نے کہا کہ منگل کو کوئی بھی صوبہ پنجاب میں انتخابات کے لیے فنڈز جاری کرنے کے سپریم کورٹ کے حکم کو رد نہیں کر سکتا۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جو بھی سپریم کورٹ کے حکم کو مسترد کرے گا وہ پانچ سال کے لیے نااہل ہو جائے گا۔

اعتزاز احسن نے سپریم کورٹ سے وزیر قانون، وزیر داخلہ اور وزیر خزانہ کو طلب کرکے نااہل قرار دینے کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ آئین میں لکھا ہے کہ صوبائی اسمبلی کی تحلیل کے 90 دن کے اندر انتخابات کرائے جائیں۔

سپریم کورٹ قانون اور آئین کی پاسداری کرے، انتخابات نہ ہونے کی صورت میں وزیراعظم، وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ اور رانا ثناء اللہ ذمہ دار ہوں گے۔

آئندہ انتخابات کے حوالے سے اعتزاز احسن نے رانا ثناء اللہ کے حالیہ بیان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ حکومت 14 مئی کو انتخابات نہیں ہونے دے گی جب کہ سپریم کورٹ پہلے ہی انتخابات اسی تاریخ کو کرانے کا حکم دے چکی ہے۔

انہوں نے سپریم کورٹ سے مطالبہ کیا کہ وزیراعظم، رانا ثناء اللہ، اعظم نذیر تارڑ اور الیکشن کمیشن کو طلب کر کے ان کے بیانات کی وضاحت طلب کی جائے۔ اگر انہوں نے سپریم کورٹ کے حکم کی خلاف ورزی کی ہے تو انہیں سزا دی جائے اور نااہل قرار دیا جائے۔

انہوں نے عمران خان کے خلاف 140 فرسٹ انفارمیشن رپورٹس (ایف آئی آر) بکنے پر بھی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اگر آپ کسی کو ناقابل تسخیر بنانا چاہتے ہیں تو اس کے خلاف مقدمات درج کراتے ہیں۔

ان کے بقول حکومت انتخابات سے بھاگنے کی کوشش کر رہی تھی لیکن آخر کار انہیں انتخابات ہی کروانے پڑیں گے۔ چیف جسٹس عمر عطا بندیال کا خیال تھا کہ مسائل آئین اور قانون کے تحت حل ہونے چاہئیں۔

سینئر وکیل نے کہا کہ عمران خان کوئی بڑا موور نہیں، زیادہ سے زیادہ اکثریت حاصل کر لیں گے۔ لیکن وہ انتخابات سے بھاگتے رہے اور ان کے خلاف 140 ایف آئی آر درج کرائیں، انہوں نے مزید کہا کہ انہوں نے ان کے گھر پر بھی حملہ کیا جس سے وہ عوام میں زیادہ مقبول ہوئے۔

انہوں نے کہا کہ نظریہ ضرورت نے ملک کو برباد کر دیا تھا کیونکہ اس کے تحت چار بار مارشل لاء لگایا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ سب کو یقین ہے کہ انتخابات 90 دن میں ہوں گے۔

اعتزاز احسن نے کہا کہ قوم اور شاہی افسران کو نظم و ضبط میں رہنا چاہیے۔ انہوں نے روشنی ڈالی کہ پاکستان نے چار فوجی بغاوتیں دیکھی ہیں، اور آئین کو متعدد بار منسوخ کیا گیا، جس کے نتیجے میں ملک کے جمہوری اداروں کو دیرپا نقصان پہنچا۔

پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما اور ممتاز قانون دان اعتزاز احسن نے پاکستان میں قانون کی حکمرانی اور آئین کو برقرار رکھنے کی اہمیت پر زور دیا۔ انہوں نے سپریم کورٹ پر زور دیا کہ وہ اس کے احکامات کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرے اور آئندہ انتخابات کے شیڈول کے مطابق انعقاد کو یقینی بنائے۔

کاپی رائٹ بزنس ریکارڈر، 2023



>Source link>

>>Join our Facebook Group be part of community. <<

By hassani

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *