MQM-P puts off sit-in after deal with PPP on delimitations

author
0 minutes, 2 seconds Read

کراچی: کراچی میں حلقہ بندیوں کی نئی حد بندیوں پر پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے ساتھ معاہدے تک پہنچنے کے بعد، متحدہ قومی موومنٹ-پاکستان (ایم کیو ایم-پی) نے ہفتہ کو اپنا اتوار کا دھرنا ملتوی کردیا۔

تاہم دوسری جانب ایم کیو ایم پی کے ساتھ بھی رابطوں کی تصدیق کر دی ہے جبکہ ایم کیو ایم کا وفد جلد وزیر اعلیٰ ہاؤس کا دورہ کرے گا۔

دونوں جماعتوں کے درمیان طے پانے والے معاہدے کے مطابق آئندہ قومی مردم شماری کے بعد کراچی کی حلقہ بندیوں کی نئے سرے سے وضاحت کی جائے گی۔

گورنر سندھ کامران ٹیسوری کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایم کیو ایم پی کے کنوینر خالد مقبول صدیقی نے اعلان کیا کہ ان کی جماعت امن مشقیں ہونے تک کراچی دھرنا ملتوی کر رہی ہے۔

“ہم قومی سلامتی کے لیے اپنے سیاسی مفادات کو قربان کرنے کے لیے ہمیشہ تیار ہیں،” خالد مقبول نے کہا کہ ملک کا استحکام کراچی کے امن و استحکام سے وابستہ ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ کسی ایک جماعت نے حلقہ بندیوں میں ‘غلطی’ سے انکار نہیں کیا۔ تاہم انہوں نے کہا کہ وہ حلقہ بندیوں کے حوالے سے اپنے مطالبات سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بحری مشقوں کے اختتام کے بعد ہم اس معاملے کو دوبارہ اٹھائیں گے۔

ایم کیو ایم پی کے کنوینر نے بتایا کہ پارٹی کی رابطہ کمیٹی مشاورت کے بعد کراچی دھرنے کی نئی تاریخ کا اعلان کرے گی۔ “ہم بحری مشق کے بعد دوبارہ احتجاج کا حق محفوظ رکھتے ہیں،” انہوں نے نتیجہ اخذ کیا۔

یہ پیشرفت گورنر سندھ کامران ٹیسوری کے بہادر آباد میں ایم کیو ایم-پی کے ہیڈ کوارٹرز کا دورہ کرنے اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کا پیغام پہنچانے کے بعد سامنے آئی۔ آج پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے

کامران ٹیسوری نے کہا کہ انہوں نے ایم کیو ایم پی کی قیادت پر زور دیا ہے کہ وہ اپنا دھرنا ملتوی کر دیں کیونکہ شہر میں بحری مشقیں جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم کو حلقہ بندیوں پر اعتراض تھا جسے پی پی پی نے قبول کیا، انہوں نے مزید کہا کہ ایم کیو ایم نے کبھی ملکی مفادات کے خلاف کوئی فیصلہ نہیں کیا۔

اس سے پہلے دن میں، یہ اطلاع ملی تھی کہ پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) نے متحدہ قومی موومنٹ پاکستان (ایم کیو ایم-پی) کی قیادت سے رابطہ کیا اور 12 فروری کو ہونے والا کراچی دھرنا ختم کرنے کی درخواست کی۔

معلوم ہوا ہے کہ پیپلز پارٹی کے ناصر حسین شاہ نے ایم کیو ایم پی کے رہنماؤں سے رابطہ کیا اور دونوں سیاسی جماعتوں کی آج گورنر ہاؤس میں ملاقات ہوئی۔ گورنر سندھ کامران ٹیسوری کی موجودگی میں ہونے والی ملاقات میں دونوں جماعتوں کے مرکزی رہنماؤں بشمول خالد مقبول صدیقی، مصطفیٰ کمال، فاروق ستار، فیصل سبزواری، ناصر حسین شاہ، مرتضیٰ وہاب اور دیگر نے شرکت کی۔


Source link

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *